Home / Home / عزازیلی لشکر۔۔۔ تحریر : محمد نسیم رنزوریار

عزازیلی لشکر۔۔۔ تحریر : محمد نسیم رنزوریار

محترم قارئین!! مغربی دنیا کے مفکرین (Thin Tank)، مشرکی اسکالرز وغیرہ نے اسلامی معاشرے میں فکری کرائے کے قاتلوں کو تربیت دی ہے کہ وہ امت مسلمہ کے مبارک جسم کو خون کی طرح اندر سے تباہ کر دیں، وغیرہ وغیرہ۔ وہ امت اسلامیہ کی پرانی اور آنے والی نسلوں کو نادانی کی طرف دھکیل رہے ہیں، تاکہ وہ امت مسلمہ کو بغیر روح کے جسم میں تبدیل کر سکیں۔ لہذا، ہم امید کرتے ہیں کہ آپ، والدین، ہوشیار رہیں گے اور اپنے بچوں کو اسلام کے زیور سے آراستہ کریں گے، انہیں کبھی ایک دن یا ایک رات کے لیے اس طرح نہ چھوڑیں، جب تک کہ آپ اسلامی پھولوں کے بستر کو پانی نہ دیں۔ اور دشمن کے ہر دشمن کو ان کی راہ میں حائل کر دے۔ بہت سے ملحد اور کچھ سیکولر عناصر اسلامی ممالک اور مسلمانوں کی پسماندگی کی وجہ اسلام کو قرار دیتے ہیں۔ سب سے پہلے مسلمانوں کے نقطہ نظر سے یہ دعویٰ سراسر غلط ہے کیونکہ مسلمان اللہ تعالیٰ کے ارشادات پر مکمل یقین رکھتے ہیں اور اس سلسلے میں اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے: لہٰذا مسلمانوں کا عقیدہ ہے کہ اللہ تعالیٰ مسلمانوں پر اچھے اور برے حالات لاتا ہے۔ . دوسری طرف اہل ایمان اس کے لیے کوشاں اور کوششیں کر رہے ہیں لیکن ایک دن آئے گا جب مسلمان ماضی کے بعد اپنی عزت اور ترقی کی طرف لوٹیں گے، انشاء اللہ ایک وقت تھا جب مسلمانوں نے دنیا پر تقریباً ایک ہزار سال حکومت کی۔ جس میں تمام لوگ امن و آشتی اور بھائی چارے کی چھتری تلے رہتے تھے۔ علم و سائنس نے اس طرح ترقی کی تھی کہ آج کی زیادہ تر ٹیکنالوجی اور سہولیات مسلمانوں کی دریافت کا نتیجہ ہیں۔ یہ یونیورسٹی پہلی بار مسلمانوں نے ایجاد کی تھی۔مغرب سے لوگ علوم و فنون کی تعلیم کے لیے اسلامی ممالک میں آتے تھے۔ وہاں غریبی نہیں تھی، کسی پر ظلم نہیں ہوا
آپ ٹھیک کہتے ہیں، دوسرا یہ کہ کون سے ممالک ترقی یافتہ ہیں اور ان کی معیشت اچھی ہے، اس کی بڑی وجہ مذہب نہیں بلکہ دیگر عوامل ہیں۔ مغرب میں بھی ایسے ممالک ہیں جہاں زیادہ تر لوگ غیرمذہبی/غیر مسلم ہیں لیکن معاشی صورتحال اتنی خراب ہے کہ لوگ بہت مرتے ہیں۔ مثال کے طور پر وینزویلا کا ملک جو جنوبی امریکہ میں واقع ہے، لاکھوں لوگ دوسرے ممالک میں ہجرت کر چکے ہیں۔غربت اور صحت کی سہولیات کی کمی کی وجہ سے لوگ روزانہ مرتے ہیں۔ نیویارک ٹائمز کے مطابق ٹرمپ نے خود کہا: وینزویلا جو اس وقت معاشی بحران کا شکار ہے، اس کی وجہ ملک کے صدر مادورو کی نااہلی اور بدعنوانی ہے۔ اس کے علاوہ، 2020 کی رپورٹ کے مطابق، یورپ میں 92 ملین سے زائد افراد غربت کا سامنا کر رہے ہیں، دوسری طرف، نصف ملین سے زائد لوگ بے گھر ہیں اور سڑکوں پر رہتے ہیں، اس نے ترقی کی ہے اور یہ جاری ہے، لیکن اس نے اپنی تمام روحانیت کھو کر ہار مان رہے ہیں، اس کا خاندانی نظام شکست و ریخت کا سامنا کر رہا ہے، میاں بیوی مادی چیزوں کے خوف سے شادی نہیں کرتے، ذہنی تناؤ اور تنہائی کی وجہ سے اپنی جان لے لیتے ہیں، اور ایک بہت بڑے بحران کا سامنا کر رہے ہیں۔ اس نتیجے پر پہنچا کہ اسلام انسانوں کی ترقی میں رکاوٹ نہیں ہے بلکہ اس کا انحصار ملکوں کے حکمرانوں کی آزادی، علم اور بصیرت پر ہے کہ وہ اپنے ملک کی ترقی کے لیے کتنی کوششیں کرتے ہیں۔ مسلمانوں کے دورِ حاضر کے حکمران مغربیوں کے کرائے پر ہیں اور اکثر اسلامی ممالک پر مغربیوں نے حملہ کر کے ان میں طرح طرح کی عدم تحفظ پیدا کر دی ہے تاکہ وہ جنگ میں شامل ہو جائیں، ایسا نہ کریں اور نہ کریں۔ ترقی کرو کیونکہ کل وہ اپنے سابقہ ​​حالات میں ضم ہو جائیں گے اور ان کے لیے درد سر ہو گا چنانچہ مسلمانوں کی پسماندگی کی اصل وجہ خود مغرب ہے۔ نیز، زیادہ تر مسلمان مغرب میں رہتے ہیں، لیکن ان کی معیشت دیگر غیر مسلموں کی طرح اچھی ہے، اور اسلام ان کی ترقی میں رکاوٹ نہیں ہے، حتیٰ کہ اکثر مسلمان وزارتوں، پارلیمنٹ اور دیگر عہدوں پر کام کرتے ہیں۔ وہ کمپنیوں، اور بڑے کاروبار کے مالک ہیں، اس لیے ان کے لیے مذہب یا اسلام رکاوٹ نہیں ہے۔ رکاوٹیں اس وقت پیدا ہوتی ہیں جب کوئی اپنے دین اور قرآن کا راستہ چھوڑ کر دوسروں کے راستے پر چلتا ہے۔ یہ دوسرے مغرب والوں کا خیال ہے کہ اسلام سائنس اور تعلیم کے خلاف ہے یا علما کو ملک کے عسکری معاملات کا علم نہیں ہے، دنیاہ کی تاریخ پر نظر ڈالیں، تاریخ بتاتا ہے اور اب جب کہ افغانستان میں اسلامی نظام نافذ ہے، یہ ایک بہت بڑی فتح ہے کہ علماء اسلام کی اشاعت میں عسکری طور پر پیچھے نہیں ہیں۔ میں صرف یہ لکھ رہا ہوں کہ بعض اوقات مغرب اسلام اور مذہب کے خلاف نعرے لگاتا ہے اور بعض مسلمان اسے برا بھلا کہتے ہیں۔لازمی تو یہ ہے کہ آپ مغربی پروپیگنڈوں کی تحقیقات تو کریں کہ واقعی یہ صحیح ہے یا غلط دوسری بات تاریخ کی مطالعہ ہے جو انسان کو آغاز سے انجام تک سب کچھ بہت واضح بتاتا ہے۔

About Dr.Ghulam Murtaza

یہ بھی پڑھیں

پاکپتن پٹرولنگ پوسٹ پل جالب کی بڑی کاروائی ، چوری شدہ دو عدد بھینسیں اور ڈالہ برآمد کرکے مالکان کے حوالے

پاکپتن ( مہر محمد نوازکاٹھیا سے) پاکپتن پٹرولنگ پوسٹ پل جالب کی بڑی کاروائی علاقہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے