تازہ ترین
Home / Home / دنیا چاری (فرضی کہانی) ۔۔۔ تحریر : عائشہ صفدر

دنیا چاری (فرضی کہانی) ۔۔۔ تحریر : عائشہ صفدر

رخسار اور عمارہ، سحر کی بہت اچھی دوست تھیں۔ سحر ایک نہایت مہذب لڑکی تھی، اپنے رب کی پہچان کرنے والے لوگوں کی فہرست میں شامل ہو کر، اس کو راضی کرنے کی کوشش کے رستے پر گامزن تھی، ساتھ ساتھ وہ دوسروں تک داعی الله کا کام بھی، جو ہر دائرہ اسلام میں سیکھنے والے کو دوسروں تک پہنچانا، اس فرض کو ادا کر رہی تھی۔ تینوں اپنی تعلیم کے سال ایک دوسرے کے ساتھ ساتھ بڑے اچھے گزار چکی تھی۔ کہ اب وقت آن پہنچا کے رخسار بیاہی جائے۔ اس نے اس خوبصورت موقع پر اپنی ہر دل عزیز دوستوں کو بھی شرکت کی دعوت دی۔ شادی کی تقریبات سے پہلے والے سارے رسم و رواج کیے گئے جن میں سے ایک برائیڈل شاور بھی تھا جو اس کی شادی سے چار پانچ دن پہلے تھا۔ خیر یہ رسم بھی دنیا چاری کے لئے ہی تھی جسے لوگ لطف اندوز ہو کر اپنے وقت اور صلاحیت دونوں ضائع کر دیتے ہیں۔
کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ ہم مقصدِ تخلیق پر ہر لمحہ اپنے رب کو کیوں نظر انداز کرکے اپنے دل کے ارمانوں کو جگا لیتے ہیں۔ جہاں جس موقع پر ہمیں بامقصد بن کر چلنا ہے، یوں تو ہمیں ہر سٹیپ/ لمحہ بامقصد بن کر رہنا ہے۔ لیکن افسوس وہی پر ہم اپنی خواہش کی چادر بچھا کر مقصد کی نفی کر جاتے ہیں۔

ظفر آدمی اس کو نہ جانیے گا، ہو وہ کیسا ہی فہم و زکا
جسے عیش میں یادیں خدا نہ رہی، جسے طیش میں خوف خدا نہ رہا

تو کیا تخلیقی ایمان یہ کہتا ہے، نہیں بلکہ قرآن کی پکار سنتے ہے۔
"اور دین اسلام میں پورے کے پورے داخل ہو جاؤ”
البقرہ:۲۰۸
خیر تقریبات میں جانے کا سحر کو بھی انویٹیشن ملا۔ لیکن اندر ہی اندر میں اس سوچ میں گم تھی کہ گر میں جاؤ تو یہ سراسر میرے ساتھ لوگوں کی بھی گمراہی کا سبب ہے، جنہیں میں دین کی دعوت دیتی ہوں، اور ان سب سے پہلے میرا رب مجھے منع کرتا ہے تو میں اپنےرب کی ناراضگی کا سبب بننےوالا کام ہر گز نہیں ۔۔۔
سحر ابھی یہ سب سوچ ہی رہی تھی کہ اللہ نے مجھے خود یاد کر لیا اور پھر اس سے بہتری کی مدد مانگی۔ کیونکہ دوستی کے لیے تو کرنا چاہتی تھی، مگر ان سب پر اللہ کا حکم ہوتا تو نا۔۔
بحرحال رب کی رضا نہ میں تھی، تو الحمدللہ بہترین ہوا۔
اور وقت گزرتا گیا۔ ایک دن اتفاقاً سحر اپنی دوست رخسار سے ملی، تو فنکشن نہ آنے پہ بات ہو گئی ۔ سحر اپنے دین کو آگے رکھے اس کو اس بے فائدہ بے مقصد رسم و رواج کو قدر نہ کرنے کا کہنے لگے تو جواب یہی ملا کہ تھوڑی سی خوشی تو ہے اگر کر بھی لی، تو کیا ہوگا۔
میرا(سحر) بھی یہی کہنا تھا کہ بامقصد بنو دنیا کے لئے چھوڑ دو۔ یہ دنیا کی لذتیں، نہ ان کا کوئی فائدہ ہے وقت بھی ضائع ہوتا ہے اور صلاحیت بھی دنیا ہی کے لیے ضائع ہو چکی اور یہ سب تو دنیا کے لیے ہی کیا جاتا ہے۔
رخسار جواباً "دنیا کے لیے کیوں ہم نے اپنے لئے کیا ہے” اور عماراً بھی چونکہ اس سے متفق تھی تو دونوں نے اپنے اس مقصد کو سحر کو بتایا ۔۔
سحر نے ادباً بڑی خوبصورتی سے ان کا جواب دیا اور کہا
” مگر یہ سب دنیا کے لیے ہی تو ہے اگر اس میں رب کی رضا مندی شامل ہوتی تو تم لوگ ہر گز ایسا نہ کرتی۔”
کیونکہ رب کے بندے عطا کردہ مقصد کو پانے کے لیے کوشاں رہتے، وہ ان فضولیات میں وقت صرف نہیں کرتے۔ سحر ان کو بس آگاہی کے لیے کوئی نہ کوئی مثالیں دیتی رہی۔ کہ دیکھو تم لوگ پڑھی لکھی ہو اور تم لوگوں پر فرض ہے، اچھا سیکھنا اور معرفت تعالیٰ کو پا لینا ہی خوش نصیبی کا سب سے اعلیٰ درجہ ہے۔ اور پھر تم اسے آگے اپنے سسرال میں جا کر رب تعالیٰ کی معرفت کروانا، سیدھی بات کہنا،
اور اچھے لوگوں کے ساتھ بیٹھنا ،انکی صحبت بھی بڑا قابل بنا دیتی ہے۔
بتانا یہی مقصد ہے دوستو ۔۔!
کیونکہ حدیث میں ہے؛
"تمہارا حشر انہیں کے ساتھ ہوگا جن سے تمہیں محبت ہے” بخاری:۲۶۸۸
جس کے لیے ہمیں کوشش کرنی ہے، نہ کہ اس دنیا میں دل لگانا ہے۔ یہ سحر کی چھوٹی چھوٹی کی گئی کوششیں تھیں تاکہ وہ خود سیکھنے کے عمل کے بعد فرض سمجھ کے ان کو بھی مقصد سمجھا دیں اور نتجاً اس فانی دنیا کو چھوڑ کر دینی مصلحت پا جائیں۔ اصل کامیابی تو ہمیشگی کی جنت ہے نا۔
"یقیناً کامیاب ہو گیا وہ شخص، جس نے تزکیہ کیا”
اس کے ذہن میں ابھی بھی بہت سے رسم و رواج کا خوف لاحق تھا جو انسان نے اپنے کندھوں پہ فضولاً ڈالا ہوا ہے کہ پتہ نہیں کون سے نئے رسم و رواج عمدہ طریقے لوگوں کی زینت بنے گے وہ جو کل ان کو آگے فالو کرنے والوں کے دل میں حسرت لیے بیٹھ گئے ہوں گے۔ ان سب میں اس نے دل و دنیا داری کی خاطر اپنا مقصد بھلا دیا افسوس۔۔ میں بھی تم سب کے لئے دعا گو ہی ہوں،
(سحر کے دل سے نکلی دعا)۔
۔
۔
[اس تحریر کا اصل مقصد اصلاحی یہ ہے کہ دنیا چاری کے لئے نہیں ، بلکہ دینی مصلحت کے ساتھ جیئے، اپنے آنے کے مقصد کو پورا کرنے کے لئے کوشاں رہے۔ حروف آخر انسان خطا کر پیدا کیا گیا ہے مگر اللہ کے ہاں اچھی کوشش کرنے والوں میں اپنا نام ضرور لکھوائیں]

About Dr.Ghulam Murtaza

یہ بھی پڑھیں

Pakistan National Football team faces travel disruption

Islamabad, (Nop Sports) The Pakistan National Football Team is set to play its final away …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے