تازہ ترین
Home / اہم خبریں / انڈیا جنوبی افریقہ کیپ ٹاؤن ٹیسٹ دو دن میں ختم، تاریخ کا مختصر ترین ثابت ہوا کیپ ٹاؤن ٹیسٹ انڈیا نے 7 وکٹ سے جیت کر سیریز برابر کر دی۔

انڈیا جنوبی افریقہ کیپ ٹاؤن ٹیسٹ دو دن میں ختم، تاریخ کا مختصر ترین ثابت ہوا کیپ ٹاؤن ٹیسٹ انڈیا نے 7 وکٹ سے جیت کر سیریز برابر کر دی۔

کیپ ٹاؤن، (رپورٹ، ذیشان حسین) جنوبی افریقہ کے شہر کیپ ٹاؤن میں جنوبی افریقہ اور انڈیا کے درمیان دوسراٹیسٹ دوسرے دن کے اختتام سے قبل ہی اپنے انجام کو پہنچ گیا۔ یہ تاریخ کا مختصر ترین ٹیسٹ میچ ثابت کیپ ٹاؤن ٹیسٹ انڈیا نے 7 وکٹ سے جیت کر سیریز برابر کی تاہم دونوں ٹیمیں مجموعی طور پر محض 642 گیندیں کھیل سکی اس سے قبل مختصر ترین میچ کا ریکارڈ آسٹریلیا اور جنوبی افریقہ کے درمیان 1932 میں میلبورن کا تھا جب دونوں ٹیموں نے 656 گیندیں کھیلی تھیں اور آسٹریلیا جیت گیا تھا کیپ ٹاؤن ٹیسٹ میں بہت سے نئے ریکارڈ بنے۔ پہلے دن ہی 23 وکٹ گرنے اور دونوں ٹیموں کے ایک ہی دن آؤٹ ہونے کا ریکارڈ بنا ایک دن میں 23 وکٹ گرنے کا ریکارڈ صرف 2 وکٹ سے پیچھے رہ گیا۔ 122 سال پہلے 1902 میں انگلینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان میچ میں ایک دن میں 25 وکٹ گری تھیں۔ 1890 میں کھیل کے پہلے روز 22 وکٹیں گری تھیں۔ کیپ ٹاؤن ٹیسٹ کی بات کی جائے تو یہ مجموعی طور پر کسی بھی دن میں گرنے والی چوتھی سب سے زیادہ وکٹیں ہیں 1888 میں انگلینڈ اور آسٹریلیا میچ کے دوسرے دن 27 وکٹیں گری تھیں اسی طرح 1896 میں اوول ٹیسٹ میں دوسرے دن 24 وکٹیں گر گئی تھیں 2018 میں بھارت اور افغانستان کے چنئی ٹیسٹ کے دوسرے دن بھی 24 وکٹیں گریں کیپ ٹاؤن میں 2011 میں جنوبی افریقہ اور آسٹریلیا ٹیسٹ کے دوسرے دن 23 وکٹ گری تھیں کیپ ٹاؤن ٹیسٹ کی پہلی اننگزمیں انڈیا کے 6 بلے بازوں نے مسلسل صفر پر آؤٹ ہوکر ایک اور نیا ریکارڈ بنایا۔ جبکہ 7 کھلاڑی صفر پر آؤٹ ہوئے تھے جنوبی افریقہ اپنی پہلی اننگز میں 55 رنز پر آؤٹ ہوئی جو انڈیا کے خلاف اس کا سب سے کم اسکور ہے جنوبی افریقہ اپنی دوسری اننگز میں 176 رنز بنا سکی جس میں ایڈن مارکرم کے 106 رنز تھے جو ٹیم کے مجموعی اسکور کا 60 فیصد ہیں کیپ ٹاؤن کے نیو ویلنڈر گراؤنڈ میں انڈیا نے اس سے قبل کوئی ٹیسٹ میچ نہیں جیتا تھا۔ یہ پہلی مرتبہ کسی میچ میں جیت ہے دونوں ٹیموں کی طرف سے بولرز نے خطرناک بولنگ کی اور بلے بازوں کی نہیں چلنے دی۔ لیکن ایک مشکل اور ناہموار پچ پر ایڈن مارکرم نے سنچری سکور کرکے اپنی اہلیت دکھائی تاہم وہ اپنی ٹیم کو شکست سے نہ بچا سکے۔
جنوبی افریقہ نے جب ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو کسی کو ادراک نہیں تھا کہ بیٹنگ بالکل ناکام ہوجائے گی۔ محمد سراج کی شاندار سوئنگ بولنگ نے کسی بھی بلے باز کو ٹکنے نہیں دیا۔ انھوں نے 15 رنز دے کر 6 کھلاڑی آؤٹ کیے جو کسی بھی انڈین بولر کی کیپ ٹاؤن میں بہترین بولنگ تھی جسپریت بھمرا اور مکیش کمار نے دو دو وکٹ لیکر سراج کا ساتھ دیا اور 55 رنز پر پوری افریقی ٹیم کو چلتا کیا۔ انڈیا کا آغاز بھی اچھا نہ تھا۔ جیسوال صفر پر آؤٹ ہو گئے لیکن روہت شرما، وراٹ کوہلی اور شبھمن گل کی بیٹنگ نے انڈیا کو 153 رنز تک پہنچا دیا۔ اگرچہ انڈیا کے 153 پر 4 کھلاڑی آؤٹ تھے لیکن جنوبی افریقی بولرز نے بغیر کوئی رنز دیے اگلے 6 کھلاڑی آؤٹ کرکے نیا ریکارڈ قائم کر دیا۔ ربادا، انگیڈی اور نئے بولر برجر نے 3 وکٹیں حاصل کیں جنوبی افریقہ کی ٹیم دوسری اننگز میں بھی مشکلات کا شکار رہی اور وقفے وقفے سے وکٹیں گرتی رہیں لیکن ایڈن مارکرم ڈٹے رہے اور جارحانہ انداز سے کھیلتے رہے۔ انھوں نے 103 گیندوں پر 106 رنز بنا کر انڈیا کو دوبارہ کھیلنے پر مجبود کردیا۔ جنوبی افریقہ نے اپنی دوسری اننگز میں 176 رنز بنائے۔ انڈیا کی طرف سے اس بار جسپریت بھمرا نے 6 وکٹ لیے اور افریقی بیٹنگ کا صفایا کردیا انڈیا کو دوسری اننگز میں جیت کے لیے 79 رنز درکار تھے جو اس نے 3 وکٹ کے نقصان پر بنا لیے۔ یوں تاریخ کا مختصر ترین ٹیسٹ میچ لنچ سے کچھ دیر بعد دوسرے دن اپنے انجام کو پہنچ گیا۔
انڈیا کے محمد سراج کو میچ میں 7 وکٹوں پر پلئیر آف دی میچ قرار دیا گیا۔

About Dr.Ghulam Murtaza

یہ بھی پڑھیں

صوبائی وزیر ثقافت، سیاحت، نوادرات و آرکائیوز سید ذوالفقار علی شاہ سے بین الاقوامی شہرت یافتہ صوفی گلوکارہ عابدہ پروین کی ملاقات، سندھ انسٹیٹیوٹ آف میوزک اینڈ پرفارمنس آرٹ جامشورو کے دورے کی دعوت

کراچی، (رپورٹ، ذیشان حسین) صوبائی وزیر ثقافت، سیاحت، نوادرات و آرکائیوز سید ذوالفقار علی شاہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے